آپ کی یاد میں جس جس نے گزاری تھی حیاتآ

آپ کی یاد میں جس جس نے گزاری تھی حیات
روز محشر تھے وہی لوگ سر راہ نجات
واعظو!نسبت سرکار دو عالم کے سوا
ان کے دیوانوں سے کرنا نہ کسی غیر کی بات
پہلے سرکار دو عالم کو بنایا رب نے
پھر بنائی گئی رحمت،پئے نذر و خیرات
ذکر سلطان دو عالم کا عجب عالم ہے
کاش مل جائے اس عالم کی مجھے آب حیات
کر نہ نتقید مرے جرم و خطا پر ناصح
میں گنہگار ہوں،مت ڈھونڈ فرشتوں کی صفات
تیرے مسلک میں شب و روز قیام اور قعود
میرے مشرب ہر اک سانس دروداور صلوۃ
جن کو چاہیں گے محمدﷺانہیں چاہے گا خدا
میرا مسلک مرامذھب،مرا ایمان ،یہ بات
لوگ محشر میں بد احوال و پریشان ہوں گے
ہم ثنا خواں ہیں ،سجائیں گے وہاں محفل نعت
میں ہوں اور گنبد خضرا کا تصور ہے ادیؔب
کاسئہ فکر ہے اور شاہ دنیٰ کی خیرات