جھکاتے ہیں ملائک جس جگہ سر،ہم بھی دیکھ آئے

جھکاتے ہیں ملائک جس جگہ سر،ہم بھی دیکھ آئے
سنوارتا ہے جہاں جبریل شہ پر،ہم بھی دیکھ آئے
جو گھر ہے خانئہ کعبہ کا محور ،ہم بھی دیکھ آئے
بچھاتے ہیں جہاں جبریل شہ پر ،دیکھ آئے
جناب قاسم ﷺعالم کا لنگر ہم بھی دیکھ آئے
جہاں خیرات لیتے ہیں تونگر،ہم بھی دیکھ آئے
عروج ِ آدم خاکی ،کہاں سے ہے،کہاں تک ہے
وہاں کی خا ک آنکھوں میں لگا کر،ہم بھی دیکھ آئے
خدائی نام ہے اُس نورکا جوکل میں پھیلا ہے
مدینہ بن گیا ہے جو سمٹ کر،ہم بھی دیکھ آئے
وہ خیمہ نور کا جس کی طنابیں رحمت حق ہیں
وہ سایہ سبز گنبد کا سروں پر،ہم بھی دیکھ آئے
جہاں مسند نشیں ہوکر ثنا حسان پڑھتے تھے
وہ محراب محبّت اور وہ منبر ، ہم بھی دیکھ آئے