طُفیلِ سرورِ عالم

طُفیلِ سرورِ عالم ﷺ ہوا سارا جہان پیدا
زمیں و آسماں پیدا مکیں پیدا مکاں پیدا

نہ ہوتا گر فروغِ نُور ِ پاک ِ رَحمت ِ عالم
نہ ہوتی خِلقت ِ آدم نہ گلزارِ جِناں پیدا

شہِ لو لاک کے باعث حبیبِ ﷺ پاک کے باعث
جنابِ حق تعالیٰ نے کیا کون و مکاں پیدا

رسول اللہ ﷺ کی خاطر کیے جن و ملک حاضر
بنایا ماہ و ا نجم کو کیا ہے بحر و بر پیدا

جمالِ حُسن میں رعنا کمالِ خُلق میں یکتا
کوئی پیدا ہوا ایسا نہ ہو وے گا یہاں پیدا

انہی کے واسطے آدم انہی کے واسطے حوا
انہی کے واسطے کافی کیے ہیں اِنس وجاں پیدا